Get Adobe Flash player

شعبہ جات

معیار تعلیم (جامعہ کے شعبے)

شعبہ مکتب پرائمری درجات:-

درجہ چہارم تک ماہر اساتذہ کے ذریعہ دینیات کی تعلیم کے ساتھ سرکاری نصاب کے مطابق تعلیم دی جاتی ہے۔

شعبہ حفظ:-

اس میں جید حفاظ کرام کے ذریعہ قرآن کی تعلیم تجوید کے ساتھ دی جاتی ہے۔ عموماً تین سال کی مدت میں طلبہ حافظ ہوجاتے ہیں۔ اس شعبہ میں ۲۰ اساتذہ کرام حفظ کرانے کے کام میں مصروف ہیں۔

شعبہ قرأت وتجوید:-

اس شعبہ میں طلبہ کو تجوید کے ساتھ قرآن پڑھنے کی تعلیم دی جاتی ہے اور اس کی مشق کرائی جاتی ہے۔ اس شعبہ میں فن تجوید کے ماہر اساتذہ کرام کے ذریعہ تجوید کے دو سالہ نصاب روایت حفص کی تکمیل کرائی جاتی ہے۔

شعبہ عربی (تحتانی):-

اس میں درجہ اولیٰ عربی سے درجہ رابعہ تک تعلیم ہوتی ہے درجہ رابعہ پاس کرلینے والوں کو مولوی کی اسناد دی جاتی ہے۔ (وسطانی) بعد مولوی کی مدت تعلیم دو سال یعنی درجہ سادسہ پاس کرلینے والوں کو عالم کی اسناد دی جاتی ہیں۔ (فوقانی) مدت تعلیم بعد عالم کے دو سال یعنی درجہ ثامنہ پاس کرلینے والوں کو دورۂ حدیث کی اسناد دی جاتی ہیں۔ اس کے بعد ایک سال افتاء کی تعلیم وتربیت دی جاکر مفتی کی اسناد دی جاتی ہیں۔

شعبہ دارالافتاء:-

جامعہ کے شعبہ دارالافتاء کو بھی اللہ تعالیٰ نے بے حد مقبولیت عطا فرمائی ہے۔ شعبہ دارالافتاء میں ہر سال ہندوستان کے مختلف مدارس خصوصاً دارالعلوم دیوبند، مظاہرعلوم سہارنپور، مدرسہ شاہی مرادآباد ودیگر بڑے مدارس سے فارغ ہونے والے طلبہ مشق افتاء کے لئے بڑی تعداد میں آتے ہیں جن کو علاوہ طعام وقیام ماہانہ معقول وظیفہ دیاجاتا ہے نیز ہندو بیرون ہند سے آنے والے سیکڑوں استفتاء کے جواب بھی دیئے جاتے ہیں۔ اس شعبے میں چھ مفتیان کرام خدمت انجام دے رہے ہیں۔نیز فتاویٰ رزاقیہ کے نام سے ترتیب فتاویٰ کا کام بھی شروع ہوچکا ہے۔

شعبہ تصحیح قرآن ونورانی قاعدہ:-

جامعہ میں نورانی قاعدہ کی تعلیم وتربیت تصحیح قرآن، نماز واذان کے لئے تین ماہ کا کورس مرتب کیا گیا ہے۔ جس میں مدارس ومکاتب میں پڑھانے والے اساتذہ کرام کو تعلیم دی جاتی ہے۔ تین ماہ کی تعلیم کے بعد سند بھی دی جاتی ہے۔

شعبہ قاضی نکاح خواں:-

اردو میں مسائل نکاح وطلاق کا امتحان دینے والوں کو قاضی نکاح خواں کی اسناد دی جاتی ہیں۔

شعبہ تحقیقات:-

اس وقت دنیا میں نئے نئے فتنے وجود پذیر ہورہے ہیں۔ فرق باطلہ گمراہی پھیلانے کی ہر ممکن کوشش کررہے ہیں۔ ان سے مقابلہ کرنے اور منہ توڑ جواب دینے کے لئے یہ شعبہ قائم کیا گیا ہے۔جس میں فارغ علماء کرام ادیان باطلہ وفرق ضالہ کاتقابلی مطالعہ کرتے ہیں۔ بعد امتحان ’’شہادۃ التدریب‘‘ کے نام سے اسناد دی جاتی ہیں۔

دارالصنائع(صنعتی کام):-

جامعہ میں شعبہ صنعت وحرفت بھی قائم ہے جس میں خارجی وقت میں وہ طلبہ جو صنعت وحرفت سے خصوصاً لگاؤ رکھتے ہیں ٹریننگ حاصل کرتے ہیں۔ فی الحال ٹیلرنگ ، جلد سازی، ٹائپنگ، موٹر گیرج کی تربیت دی جارہی ہے۔ آئندہ مزید ان شعبوں کو دوسرے ٹیکینکل شعبوں کے قیام کے ساتھ ان کو وسیع کرنے کا منصوبہ ہے۔

 

 کمپیوٹر

موجودہ زمانہ کی اہم ضرورت، کتابت،طباعت دین کی اشاعت بھی اس کے ذریعہ کی جارہی ہے اسی ضرورت کے پیش نظر جامعہ میں بھی کمپیوٹر کا ایک مستقل شعبہ قائم کیا گیا ہے۔ جس میں عربی درجات کے بڑے طلبہ تربیت حاصل کرتے ہیں۔ سرکاری نصاب کے مطابق تھیوری، سافٹ ویر، ہارڈ ویر، پریکٹیکل کی ٹریننگ ہوتی ہے اور سرکاری سرٹیفیکٹ دیا جاتا ہے۔

صدر کا پیغام

آج کے اس آزمائشی دور میں امت مسلمہ کا یہ فرض ہے کہ وہ خود کو دینی تعلیمات سے پوری طرح وابستہ کرلے۔ دینی اور دنیوی تمام معاملات میں اسلام کی جیتی جاگتی تصویر اور نمونہ بن جائے، ایسی تصویر اور نمونہ کہ ساری دنیا اسے رشک کی نگاہوں سے دیکھنے لگے اور اس کی ذات اپنے اپنے غیر مسلم بھائیوں کی نظروں میں قابل احترام بن جائے۔ ساری دنیا کو آج حق اور روحانیت کی شدید تلاش ہے۔ اسلام کے دامن میں اسے نورانیت نظر آرہی ہے اور قرآنی تعلیمات دلوں میں گھر کرتی جارہی ہیں ۔ آپ یقین رکھیں وہ دن زیادہ دور نہیں ہے کہ ’’ورایت الناس یدخلون فی دین اللہ افواجا‘‘ اور تم دیکھوگے لوگوں کو داخل ہوتے ہوئے اللہ کی دین میں جوق در جوق کا روح پرور منظر آنکھوںکے سامنے ہوگا۔